Published On: Mon, Jul 22nd, 2013

انگلینڈ میں چپل اور لباس پر تنازع

Share This
Tags

130721123208_uk-dress(بی بی سی نیو ز)

انگلینڈ کے شہر پلمتھ میں سٹی کونسل نے ملازمین کو دفتر میں ربڑ کی چپل اور عریاں لباس پہننے سے منع کیا ہے۔
پلمتھ سٹی کونسل نے سٹاف سے کہا ہے کہ وہ ایسے لباس نہ پہنیں جس میں جسم کی بہت زیادہ نمائش ہوتی ہو اور ربڑ کی ہوائی چپل تو وہ قطعی نہیں پہن سکتے ہیں۔
دوسری جانب شہر کی مزدور یونین کا کہنا ہے کہ ملازمین کو سخت گرمی میں کام کرنا پڑ رہا ہے۔
برطانیہ میں ان دنوں معمول سے زیادہ گرمی پڑ رہی ہے۔ کئی مقامات پر درجہ حرارت 30 ڈگری سے اوپر پہنچ چکا ہے۔
سٹی کونسل کے مطابق اگرچہ آفس میں کس طرح کے کپڑے پہنے جائیں، اس بارے میں’کوئی ضابطہ اخلاق‘ نہیں ہے لیکن پھر بھی ملازمین کو ربڑ کی چپل استعمال نہ کرنے کے لیے ’شائستہ انداز سے متنبہ‘ کیا گیا ہے۔
کونسل کی جانب سے جاری مشورے کے مطابق: ’آفس میں ’کول‘ نظر آنا بجا ہے لیکن برائے مہربانی یہ یاد رکھیں کہ یہاں ایک دفتر کا ماحول ہے اور لوگوں سے امید کی جاتی ہے کہ وہ مناسب لباس پہنیں گے۔‘
مشورہ میں مزید کہا گیا ہے: ’ہمیں ایسے کپڑوں کو زیب تن کرنے سے اجتناب کرنا چاہیے جن میں جسم کا زیادہ حصہ نظر آئے اور ربڑ کی چپل تو بالکل ہی قابل قبول نہیں ہے۔ اس کے لیے کوئی شرائط نہیں ہیں۔ ہم مانتے ہیں کہ ہم سب لوگوں میں اتنی سمجھ ہے کہ ہم کس طرح کے کپڑے پہنیں۔‘
وہیں ملازمین کی یونین کی ایک ترجمان نے کہا: ’ہمارے اراکین یہ مانتے ہیں کہ یہ ایڈوائزری انتظامیہ کی جانب سے ایک حکم کے طور پر دیکھی جا رہی ہے۔ پلیمتھ سٹی کونسل اس بارے میں عملی رویہ نہیں اپنا رہی ہے۔ ہمارے اراکین ہمیں بتا رہے ہیں کہ ان کے آفس پورے دن بہت زیادہ گرم رہتے ہیں حالانکہ وہاں پنکھے لگے ہوئے ہیں لیکن ان سے گرم ہوا ہی پھیلتی ہے۔‘

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>