Published On: Thu, Aug 8th, 2013

کرکٹ میں بال کے بعد اب ’’بیٹ ٹیمپرنگ‘‘ بھی شروع

Hotspotcricketکرکٹ میں بال کے بعد اب بیٹ ٹیمپرنگ بھی شروع ہوگئی، ایک آسٹریلوی ٹی وی چینل نے الزام لگایا کہ ایشز سیریز میں بعض بیٹسمینوں نے اپنے بیٹس کے کونے پر سیلیکون ٹیپ لگائے۔ اس کا مقصد ہاٹ اسپاٹ ٹیکنالوجی کو چکمہ دینا تھا، معاملے کی آئی سی سی نے بھی تحقیقات شروع کر دی ہیں، دوسری جانب کونسل نے اس دعوے کو غلط قرار دیا ہے، پیٹرسن الزام پرغصے میں آگ بگولا ہو گئے، مائیکل کلارک نے بھی صفائیاں دینا شروع کردی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق انگلینڈ وآسٹریلیا کی ایشز سیریز میں ابتدائی تینوں ٹیسٹ ڈی آر ایس کے حوالے سے تنازعات کا شکار ہوئے، خاص کار ہاٹ اسپاٹ زیادہ تنقید کا نشانہ بنا، اس ٹیکنالوجی میں انفراریڈ کیمروں کی مدد سے پتا لگایا جاتا ہے کہ گیند نے بیٹسمین کے بیٹ یا پیڈ کو چھوا یا نہیں، بیٹ سے لگنے کی صورت میں ایک سفید دھبا تصویر میں واضح ہو جاتا ہے، اولڈ ٹریفورڈ ٹیسٹ میں آسٹریلوی بیٹسمین عثمان خواجہ کو وکٹوں کے عقب میں کیچ قرار دیا گیا مگر ری پلیز کے مطابق ہاٹ اسپاٹ میں گیند بیٹ سے لگنے کا کوئی واضح ثبوت موجود نہیں تھا۔ اسی وجہ سے کرکٹ آسٹریلیا نے آئی سی سی سے وضاحت بھی طلب کی، بعد میں اسی میچ میں کیون پیٹرسن کو بھی اسی انداز میں آؤٹ قرار دیا گیا۔ اب ایک آسٹریلوی ٹی وی چینل نے الزام لگایا کہ بعض بیٹسمینوں نے ہاٹ اسپاٹ میں گیند کے بیٹ سے ٹکرانے کا ثبوت سامنے آنے سے بچانے کیلیے اپنے بیٹس کے کونے پر سیلیکون ٹیپ لگائے، تیسرے ٹیسٹ کی دوسری اننگز میں کیون پیٹرسن کے آؤٹ پر بھی تشویش پائی جاتی ہے جب گیند کے بیٹ سے ٹکرانے کی آواز آئی مگر ہاٹ اسپاٹ سے کچھ علم نہ ہوا، رپورٹ کے مطابق آئی سی سی کے جنرل منیجر کرکٹ جیف ایلرڈائس معاملے کی تحقیقات کیلیے ڈرہم آ رہے ہیں جہاں چوتھا ٹیسٹ ہونا ہے۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>