Published On: Tue, Jul 23rd, 2013

مانچسٹر یونائیٹڈ کی فیبریگاس کو خریدنے کوشش

fabregas_spain_euro reuters_nocredit( بی بی سی نیو ز)

مانچسٹر یونائیٹڈ نے بارسلونہ اور سپین کے فٹ بال ٹیم کے مڈ فیلڈر کھلاڑی سیس فیبریگاس کے لیے دوسری بار بولی لگائی ہے۔
مانچسٹر یونائیٹڈ نے 26 سالہ کھلاڑی کے لیے پیر کو 25 ملین پاؤنڈ اور پھر اسے بڑھا کر 30 ملین پاؤنڈ بولی کی تصدیق کی ہے۔ ان مذاکرات کی سربراہی مانچسٹر یونائیٹڈ کے ایکزیکٹیو وائس چیئیرمین ایڈو وڈوارڈ کر رہے ہیں۔
مانچسٹر یونائیٹڈ کے مینجر ڈیوڈ موئیز نے یوکوہاما میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ’میں سمجھتا ہوں کہ ایڈ کو پہلی بولی کا ردِ عمل ملا۔‘
انھوں نے کہا کہ ’ہم نے دوسری آفر بھی دی ہے لیکن ایڈ اس کو دیکھ رہے ہیں میں نہیں۔‘
ان کا کہنا تھا کہ ’جب آپ اچھے کھلاڑیوں کو ٹیم میں لانے میں دلچسپی رکھتے ہیں تو آپ اس کے لیے ہر ممکن کوشش کرتے ہیں۔‘
ڈیوڈ موئیز نے کہا کہ ’ مجھے امید ہے کہ یہ بات آگے جائے گی۔ اس وقت میں صرف یہی بتا سکتا ہوں کہ ایڈ اس ڈیل کو مکمل کرنے کے لیے بہت محنت کر رہے ہیں۔‘
مانچسٹر یونائیٹڈ کی طرف سے ابتدائی آفر کے دو دن بعد ایڈ ووڈوارڈ سیس فیبریگاس کو ٹیم میں لانے کے لیے آسٹریلیا سے وطن واپس پہنچ گئے تھے۔
بارسلونہ نے اس معاملے پر ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے لیکن ٹیم کے مینیجر تیتو ویلانوا نے خراب صحت کی وجہ سے اپنا عہدہ چھوڑ دیا ہے جس کی وجہ سے حالات پیچیدہ ہو گئے ہیں۔
یہ واضح نہیں کہ آیا مانچسٹر یونائیٹڈ چیلسی کی طرف سے یونائیٹڈ کے سٹرائکر رونی کو اپنی ٹیم میں لانے کی کوششوں کی وجہ سے سیس فیبریگاس کو اپنے ٹیم میں شامل کرنا چاہتے ہیں۔
سپین سے تعلق رکھنے والی سیس فیبریگاس بارسلونہ کے ماسیہ اکیڈمی کے ذریعے آئے جس کے بعد انھیں آرسینل کلب نے 2003 میں سولہ سال کی عمر میں اپنے کلب میں شامل کیا۔
فیبریگاس نے آرسنل کے ساتھ آٹھ سال گزارے جس کے دوران انھوں نے 303 گیم کھیلے اور 57 گول سکور کیے۔ وہ 2011 میں 25.4 ملین پاؤنڈ کے پانچ سالہ معاہدے کے تحت بارسلونہ میں واپس گئے۔
انھوں نے بارسلونہ کو 12-2011 کا کوپا ڈیل رے اور 13 – 2012 کا لیگا لا کپ جیتوانے میں اہم کردار ادا کیا۔
فیبریگاس نے 83 میچوں میں سپین کی نمائندگی کی جس میں 2010 کا ورلڈ کپ اور دو دفعہ یورپین چیمپئین شپ کی جیت شامل ہے۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>