Published On: Wed, Jun 12th, 2013

چین نے تین خلا بازوں کا مشن روانہ کر دیا

china_space_missionچین نے شینزو 10 نامی خلائی جہاز کو مشن پر بھیجا دیا ہے۔

منگولیا میں واقع جوئیکواں بیس سے’لانگ مارچ ٹو ایف راکٹ‘ کی مدد سے تین خلابازوں کو اس مشن پر روانہ کیا گیا ہے۔
راکٹ مقامی وقت کے مطابق تقریباً ساڑھے پانچ بجے زمین سے روانہ ہوا۔

کمانڈر نیہائیشنگ اور اُن کا عملہ، زہینگ ضیاؤگانگ اور وینگ یپنگ، زمین کے گرد مدار میں موجود تیانگونگ خلائی لیب میں تقریباً دو ہفتوں سے کم عرصہ گزاریں گے۔

وینگ یپنگ چین کی دوسری خاتون خلا باز ہیں اور وہ خلا سے زمین پر پہلی بار براہِ راست طلبہ کو خلا کے بارے میں معلومات دیں گی۔

خلا بازوں کا کیپسول پرواز کے نو منٹ بعد راکٹ سے علیحدہ ہو گیا اور تقریباً چالیس گھنٹوں میں وہ تیانگونگ خلائی لیب کی اونچائی یعنی تقریباً زمین سے تین سو پینتیس کلومیٹر کی بلندی پر پہنچ جائے گا۔

یہ چین کی خلائی تاریخ میں پانچویں ایسی خلائی پرواز ہے جس پر انسان سوار ہیں اور یہ مشن اُن تمام پروازوں میں طویل ترین ہوگا۔

روس اور امریکہ کے بعد چین دو ہزار تین میں خلاء میں بغیر بیرونی مدد کے خلاء میں مشن بھیجنے والا تیسرا ملک بن گیا تھا۔

گزشتہ برس چینی خلائی سائنسدانوں نے خلاء میں ایک پیچیدہ عمل میں اس وقت کامیابی حاصل کی تھی جب ریموٹ کنٹرول کی مدد سے ایک خلائی جہاز کو چین کے تجرباتی تیانگونگ خلائی مرکز سے جوڑا گیا تھا۔

یہ مشن چین کے ایک گردش کرنے والے خلائی مرکز کی تیاری کا حصہ ہے۔

چین 2020 تک اس ساٹھ ٹن وزنی خلائی سٹیشن کو مکمل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

بین الاقوامی خلائی سٹیشن کی طرح اس خلائی مرکز میں بھی طویل عرصے تک خلابازوں کی رہائش اور سائنسی تحقیق کی سہولیات موجود ہوں گی۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>