Published On: Fri, Jul 19th, 2013

’4 ارب سال قبل مریخ کا ماحول زمین جیسا تھا‘

130709031709_mars_mount_sharp_304x171_nasa_nocredit(بی بی سی نیو ز)

سیارہ مریخ کی سطح کا تجزیہ کرنے والے امریکی خلائی ادارے ناسا کے روبوٹ کیوروسٹی کو ٹھوس ثبوت ملے ہیں کہ سرخ سیارہ کبھی رہائش کے قابل تھا۔
سائنس نامی جریدے میں شائع ہونے والے نتائج کے مطابق مریخ کے ماحول کے اب تک کے سب سے مفصل تجزیے سے پتہ چلا ہے کہ چار ارب سال قبل مریخ اور زمین کے ماحول میں زیادہ فرق نہیں تھا۔
تجزیے کے مطابق مریخ کی فضا میں ایک دبیز تہہ موجود تھی اور سیارے کی سطح گرم اور گیلی بھی تھی تاہم یہ اب بھی واضح نہیں کہ آیا مریخ پر کبھی زندگی موجود تھی یا نہیں۔
اس سے قبل ناسا کی روبوٹ گاڑی نے مریخ کی سطح سے اس بات کا ثبوت حاصل کیا تھا کہ سیارے کے بہت سے ارضی مناظر بہتے ہوئے پانی نے تشکیل دیے ہیں۔
سائنس دانوں نے کہا تھا کہ انھیں سرخ سیارے کے ڈیڑھ سو کلومیٹر چوڑے گیل گڑھے کے فرش پر گول کنکر ملے ہیں جن کی شباہت زمین کے دریاؤں میں ملنے والی بجری جیسی ہے۔
کیوروسٹی نے گیل گڑھے میں کئی چٹانوں میں اس قسم کے مظاہر کی تصاویر کھینچی تھیں۔
کیوروسٹی کو مریخ کی سطح پر گزشتہ برس چھ اگست کو اتارا گیا تھا اور اس کے بعد سے اس نے گیل نامی گڑھے کی جانب سفر کیا ہے۔
ناسا کی اس مریخ گاڑی کا مشن یہ معلوم کرنا ہے کہ آیا مریخ پر موجود اس گڑھے میں ماضی میں کبھی ایسا ماحول رہا ہے جو جراثیمی زندگی کے لیے سازگار ہو۔
اس تحقیق میں پتھروں کی ساخت معلوم کرنا بے حد ضروری ہے کیوں کہ وہاں ان ارضیاتی حالات کا سراغ موجود ہو گا جس کے تحت وہ وجود میں آئے تھے۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>