Published On: Sat, Aug 24th, 2013

پاکستان کو ترقی کرنے کیلئے بھارت پر تنقید سے گریز کرنا ہو گا،میاں نواز شریف

وزیراعظم میاں نواز شریف نے اسی خواہش کا اظہار کیا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان امن قائم ہو اور دونوں کو کشمیر کے مسئلہ کا پر امن حل نکالنا چاہیے لیکن اس کے لیے بھارت کو سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا وہ انتخابات میں اپنی کامیابی کو بھارت کے ساتھ امن کے مینڈیٹ کے طورپر دیکھتے ہیں اگر خوشحالی چاہیے تو بھارت کے ساتھ تعلقات میں پیش رفت ہونی چاہیے ایک برطانوی اخبار کو دیئے گئے انٹرویو میں وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ انہوں نے انتخابات سے قبل اور انتخابات کے بعد بھارت کے خلاف کوئی نعرہ نہیں لگایا وزیراعظم نے کہا کہ دونوں ممالک دفاعی سازوسامان پر پہلے ہی کافی اخراجات کر چکے ہیں وہ جنگی طیاروں ،آبدوزوں اور دوسرے سازوسامان پر بڑی رقم خرچ کرنے کی دوڑ میں لگے رہے اب دونوں حکومتوں کو چاہیے کہ وہ یہ رقم عوام کی فلاح و بہبود کے لیے خرچ کریں اس کے لیے دفاعی بجٹ میں کٹوتی کرنا پڑی تو کریں گے لیکن اس میں بھارت کو بھی آگے بڑھنا ہوگا انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کو ماضی کی غلطیوں کو بھول کر تعلقات میں بہتری لانے کے لیے مذاکرات کی میز پر آنا چاہیے اس کے لیے بھارت کو بھی کوششیں کرنا ہوں گی اس سوال پر کہ پاک فوج ان تعلقات کو قبول کرے گی یا نہیں میاں نواز شریف نے کہا کہ بھارت کے ساتھ تعلقات اور دفاعی بجٹ میں کٹوتی پر حکومت اور فوج کا ایک ہی نقطہ نظر ہے۔ میاں نواز شریف نے قیام امن کے لیے طالبان کے ساتھ مذاکرات کو ضروری قرار دیا ان کا کہنا تھا کہ اقتصادی کامیابی کے لیے سیکورٹی بنیادی ضرورت ہے برطانوی اخبار ٹیلیگراف کو دیئے گئے انٹرویو میں وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان میں قیام امن کے لیے طالبان کے ساتھ براہ راست مذاکرات کے آپشن کواپنانا چاہتے ہیں بھارت کے ساتھ تمام تنازعات مذاکرات کے ذریعہ حل کرنا چاہتے ہیں امریکہ کے ساتھ تعلقات پر میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ امریکہ کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتے ہیں۔ وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان بھارت کے ساتھ امن چاہتا ہے،طالبان کے ساتھ بات چیت میں کوئی حرج نہیں۔ برطانوی اخبار ٹیلیگراف کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا پاکستان کو ترقی کرنے کیلئے بھارت پر تنقید سے گریز کرنا ہو گا۔بھارت سے مذاکرات کے ذریعے کشمیر سمیت تمام مسائل حل کرنے کے بارے پالیسی واضح ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بھارت کے ساتھ تعلقات کے حوالے سے انتخابات سے قبل ہی واضح بیان د یا تھا۔پاکستان اور بھارت نے فوجی سازوسامان کی خریداری پر بہت پیسہ خرچ کیا۔بدقسمتی سے دونوں ممالک اسلحہ خریدنے کی دوڑ میں شامل ہو چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ فوج پر لگائی جانے والی رقم سماجی بہبود کے پروگراموں میں استعمال ہونی چاہئے۔نواز شریف نے کہا کہ طالبان سنجیدہ ہوں تو مذاکرات کرنے میں کوئی حرج نہیں،ڈرون حملے خودمختاری کو نقصان پہنچا رہے ہیں،ان کا خاتمہ ہونا چاہئے۔

 

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>