Published On: Mon, Jul 15th, 2013

توہین رسالت قانون:’شعور پیدا کرنے کی ضرورت‘

130310123248_blasphemy_lahore_violence_anti_christianity_304x171_bbc_nocredit(بی بی سی نیو ز)

پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم آل پاکستان مائنارٹیز الائنس نے کہا ہے کہ ملک میں توہین رسالت سے متعلق قانون ختم کرنے کی بجائے عوام میں شعو ر اور قومی ہم آہنگی پیدا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ اس کا غلط استعمال نہ ہو سکے۔
تنظیم نے اقلیتی خواتین کے اغواء اور خواتین سے زبردستی مذہب تبدیل کرانے کے واقعات کی مذمت کی ہے۔
اتوار کو اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آل پاکستان مائنارٹیز الائنس کے چیئرمین ڈاکٹر پال بھٹی نے کہا ہے کہ پاکستان میں بعض عناصر مذہب کے نام پر دہشت گردی کر کے ملک کو مشکلات سے دوچار کر رہے۔جس کےخلاف حکومت، علماء اور عوام سب کو مل کر جنگ لڑنی ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ بعض انتہاء پسند عناصراقلیت سے تعلق رکھنے والے افراد خصوصاً خواتین کو اغواء کر کے ان پر نہ صرف جھوٹے الزامات عائد کرتے ہیں بلکہ انہیں ڈرا دھمکا کر زبردستی مذہب تبدیل کرنے پر مجبور کرتے ہیں۔
پال بھٹی نے حکومت سے کہا ہے کہ اقلیتوں کی مذہبی آزادی کا احترام کرتے ہوئے فوری طور جبراً مذہب تبدیل کرنے کے خلاف قانون سازی کر کے اقلیتوں کو تحفظ فراہم کیا جائے۔
بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر پال بھٹی کا کہنا تھا کہ کئی ممالک میں توہین رسالت کا قانون موجود ہے اور پاکستان میں اس قانون کو ختم کرنے کی بجائے عوام میں شعو ر اور قومی ہم آہنگی پیدا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ اس کا غلط استعمال نہ ہو سکے۔
مائنارٹیز الائنس نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ سینیٹ میں اقلیتوں کے لیے چار نشستیں جبکہ قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں اقلیتی نشستوں میں اضافہ کیا جائے۔اس کے علاوہ تمام اسمبلیوں میں اقلیتی خواتین کے لیے پانچ فیصد نشستیں مختص کی جائے۔
تنظیم نے وفاقی سطح پر وزارت قومی ہم آہنگی کی فوری بحالی کامطالبہ بھی کیا ہے۔ بقول ڈاکٹر پال بھٹی کہ یہ وزارت وفاق میں اقلیتوں کا واحد پلٹ فارم تھاجس کے تحت اقلیتوں کے مسائل حل کرنے کی مخلصانہ کوششیں کی گئیں۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>