Published On: Thu, Sep 5th, 2013

پنجاب میں اب تک ڈینگی کے 71کنفرم کیس رپورٹ ہوئے ہیں: محکمہ صحت

mosquitoوزیر صحت پنجاب خلیل طاہر سندھو نے کہا ہے کہ پنجاب میں ڈینگی کا مرض کنٹرول میں ہے ،عوام تشویش میں مبتلا نہ ہوں البتہ صوبہ سندھ اور ضلع سوات خیبر پختونخواہ میں ڈینگی کے مرض میں اضافے کے پیش نظر ہمیں زیادہ مستعدرہنا ہوگا اورتمام سرکاری محکمے اورعوام ڈینگی پرموثر کنٹرول برقرار رکھنے کے لیے مربوط کو ششیں جاری رکھیں۔انہوں نے یہ بات سول سیکرٹریٹ کمیٹی روم میں ڈینگی کی صورتحال اور اس پر کنٹرول کے لیے مختلف محکموں کی طرف سے جاری اقدامات کا جائزہ لینے کے لیے کابینہ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر خواجہ سلمان رفیق کے علاوہ لاہور اوردیگر شہروں سے تعلق رکھنے والے اراکین پنجاب اسمبلی ،سرکاری محکموں کے سیکرٹریز ، ایڈیشنل سیکرٹریز ، ایڈیشنل کمشنر لاہور ، پنجاب انفارمیشن ثیکنالوجی بورڈ اور سپیشل برانچ کے سینئر افسران نے شرکت کی ۔ ڈینگی ایکسپرٹ ایڈوائزری گروپ کے کنوینئر اور وائس چانسلر KEMU پروفیسر ڈاکٹر فیصل مسعود نے بھی اجلاس میں شرکت کی ۔ سیکرٹری صحت پنجاب حسن اقبال نے ڈینگی کے بارے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پنجاب میں اب تک ڈینگی کے 71 کنفرم کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ صوبہ سندھ میں ڈینگی کے کنفرم مریضوں کی تعداد 943 اور کراچی میں 847 ہے اور وہاں ڈینگی سے 10 اموات ہو چکی ہیں اسی طرح ضلع سوات صوبہ خیبر پختونخواہ میں ڈینگی کے 1056 کنفرم مریض سامنے آ چکے ہیں اور 240 مریض ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں ۔ سیکرٹری صحت نے بتایا کہ محکمہ صحت پنجاب نے صوبہ سندھ اور خیبر پختونخواہ کے محکمہ صحت کو ڈینگی کنٹرول کے سلسلہ میں تعاون اور مدد کرنے کی پیشکش کی تھی اور پنجاب کے ماہرین کی ٹیم ضلع سوات میں ایک ہفتہ رہ کر وہاں کے ڈاکٹروں اور ڈینگی کنٹرول کے اہلکاروں کو مریضوں کے علاج اور ڈینگی کی روک تھام کے لئے تربیت فراہم کر چکی ہے ۔ مزید برآں وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر محکمہ صحت نے خیبر پختونخواہ کو ڈینگی کے مریضوں کے خون کے ٹیسٹ کے لئے CBC کی 2 مشینیں عطیہ کرنے کے علاوہ سپرے کے لئے 200 کلو گرامTemephos اور 180 کلوDelteramathrin بھی فراہم کی ہے اور مریضوں کے لئے Dextron 40کی بوتلیں بھی دی ہیں ۔ حسن اقبال نے بتایا کہ
سیکرٹری صحت سندھ سے انہوں نے خود بھی رابطہ کیا تھا تاہم سندھ کی حکومت نے پنجاب کے ماہرین کی ٹیم کا دورہ کراچی ملتوی کر دیا ہے ۔ سیکرٹری صحت نے کہا کہ دیگر صوبوں کی صورتحال کو پیش نظر رکھتے ہوئے پنجاب کے محکموں اور عوام کو الرٹ رہنے کی ضرورت ہے ۔اس موقع پر سیکرٹری کوآپریٹو ، جنگلات ، لیبر ، سوشل ویلفیئر ، لوکل گورنمنٹ ، ہائر ایجوکیشن ، سکول ایجوکیشن ، ماحولیات کے علاوہ پنجاب فوڈ اتھارٹی ، ایڈیشنل کمشنر لاہور ، PITB اور سپیشل برانچ کے افسران نے صوبہ میں ڈینگی کنٹرول کے لئے لاروے کی تلاش / تلفی کی سرگرمیوں ، عوامی آگاہی کے لئے سیمینارز ، واکس کے انعقاد ، پملفٹس کی تقسیم ، قبرستانوں ، کباڑ خانوں ، نرسریوں ، ٹائر شاپس ، زیر تعمیر عمارات ، تہہ خانوں اورصنعتی اداروں کی چیکنگ کے علاوہ انڈور/ آؤٹ ڈور ڈینگی سرویلنس کے بارے بریفنگ دی ۔ اس موقع پر اراکین اسمبلی نے ڈینگی کنٹرول کے سلسلہ میں اپنی تجاویز بھی پیش کیں ۔ خواجہ سلمان رفیق نے کہا کہ سرکاری سکولوں کے ساتھ نجی سکولوں پر زیادہ فوکس کرنے کی ضرورت ہے تاکہ وہاں تعلیم حاصل کرنے والے بچے اس بیماری سے محفوظ رہ سکیں ۔ اجلاس کے شرکاء نے سرکاری محکموں کی ڈینگی کنٹرول کے سلسلہ میں کوششوں کو سراہتے ہوئے ان سرگرمیوں کو مسلسل جاری رکھنے کی ضرورت پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں عوام کا زیادہ سے زیادہ تعاون حاصل کیا جائے ۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>