Published On: Thu, Jun 27th, 2013

’نشہ آور ادویات منشیات سے زیادہ خطرناک ہیں‘

legal_drugs(بی بی سی نیو ز)

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ دنیا میں ایسی نشہ آور اشیاء کی تعداد میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوا ہے جن کی فروخت کی قانونی طور پر اجازت ہے۔
اقوام متحدہ کے ادارے برائے منشیات اور جرائم کی عالمی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومتیں ایسی ادویات کے بڑھتے ہوئے استعمال کو روکنے کی کوشش کر رہی ہیں جنہیں ’قانونی‘حیثیت حاصل ہے۔
عالمی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ عالمی سطح پر ہیروئن اور کوکین جیسی روایتی نشہ آور ادویات کے استعمال میں اضافہ نہیں ہوا ہے۔ لیکن ذہنی سکون حاصل کرنے کے لیے دیگر نشہ آور ادویات انٹرینٹ کے ذریعے پوری دنیا میں تیزی سے پھیل رہی ہیں۔
رپورٹ میں خبردار کیا گیا ہے کہ انٹرنیٹ کے ذریعے بازار میں فروخت ہونے والی ایسی سکون بخش ادویات روایتی منشیات سے بھی کہیں زیادہ خطرناک ہو سکتی ہیں۔
منشیات کی عالمی رپورٹ کے متن کے مطابق نئی سکون بخش ادویات کتنی محفوظ ہیں یہ جانچا نہیں گیا ہے لیکن یہ ادویات ’صحت کے لیے غیر متوقع چیلنج‘ ہیں۔
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مصالحہ یا باتھ سولٹ یا میاؤں میاؤں جیسے نام دی گئیں ادویات نوجوانوں کو ’کم خطرے والی تفریح‘ کی جانب گمراہ کرتی ہیں۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>