Published On: Mon, Sep 2nd, 2013

بالوں کا گھمبیر مسئلہ

dogal-urunlerle-sac-dokulmesini-onlemekمیرے بالوں کا مسئلہ بہت گھمبیر صورت اختیار کرتا جارہا ہے‘ میرے بال دن بدن کمزور اور روکھے ہوتے جارہے ہیں جس کی وجہ سے میں بہت پریشان ہوں‘ پہلے میرے بال بہت گھنے اور لمبے تھے لیکن پچھلے چند ماہ سے بہت زیادہ تعداد میں گرنا شروع ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے میں بہت زیادہ پریشان ہوں براہ مہربانی مجھے کوئی مشورہ دیں۔ شکریہ! (آسیہ شفیق‘ لاہور)

مشورہ: گھنے بالوں کا مسئلہ کچھ زیادہ ہی نظر آرہا ہے۔ کئی خطوط آئے جن کے بال گر رہے ہیں اچھے سے اچھے شیمپو اور صابن کے استعمال کے بعد بھی بالوں کی نشوونما نہیں ہورہی۔ کچھ کا مسئلہ یہ ہے کہ بالوں کی چمک ختم ہوگئی ہے اور وہ ٹوٹ رہے ہیں۔ باوجود احتیاط کے بال لمبے نہیں ہوتے اور بے جان نظر آتے ہیں۔ بالوں کی خوبصورتی کا تعین ان کی لمبائی اور ان کے گھنے پن سے کیا جاتا ہے کچھ خواتین کے گھنیرے بال دیکھ کر رشک آتا ہے۔ چھدرے بالوں والی خواتین چاہتی ہیں ان کے بال گھنے ہوجائیں۔ ان کو معلوم نہیں بالوں کاگھنا ہونا موروثی ہوتا ہے۔ پیدائشی طور پر کم بال ہوں تو ان کو احتیاط کے ساتھ دیکھ بھال کرکے سنبھالا جاتا ہے۔ باریک بال ہوں تو ان کو آپ گرنے سے بچاسکتے ہیں۔

ناقص غذا‘ خراب پانی‘ سوڈے والے صابن اور خراب شیمپو استعمال کرنے سے بھی بال گرتے ہیں‘ کوئی غم لاحق ہوتو اس سے بھی بال گرنے شروع ہوجاتے ہیں۔ بچے کو دودھ پلانے کے دوران بھی غذا کی کمی سے بال تیزی سے گرتے ہیں جو لوگ سر میں بالکل مساج نہیں کرتے‘ ان کے بال بھی بے رونق اور خشک ہوجاتے ہیں۔بال انسانی شخصیت کی کشش کا باعث ہوتے ہیں۔ یہ کشش برقرار رکھنے کیلئے بالوں کی دیکھ بھال بہت ضروری ہے۔ ذہنی تنائو اور دبائو سے وہ سب سے پہلے متاثر ہوتے ہیں۔ آج کے دور نت نئے شیمپو کے اشتہار آتے ہیں ان سے متاثر ہوکر خواتین انہیں استعمال کرتی ہیں اور بسا اوقات نقصان اٹھاتی ہیں۔

پہلے زمانے میں سرسوں کی کھل سے سر دھویا جاتا اور سرسوں کا خالص تیل سر پر لگایا جاتا تھا۔ اس سے بال سیاہ‘ چمکیلے اور گھنے رہتے تھے‘ سفید بھی نہیں ہوتے تھے۔ بادام کی کھل سے بھی بال دھوئے جاتے تھے اور ناریل کا تیل لگایا جاتا تھا۔ بنگال میں ناریل کا تیل استعمال کرنے سے بال بے حد لمبے اور پرکشش ہوتے تھے۔ چمبیلی کے تیل میں مختلف جڑی بوٹیاں ملا کر تیل بنایا جاتا تھا۔ آنولے اور ریٹھے سے بھی سر دھویا جاتا‘ بیری کے پتے پیس کر سر دھونے سے بھی بال مضبوط اور گھنے ہوتے تھے۔ وقت کے ساتھ ساتھ یہ ساری باتیں ختم ہوئیں اب خشک بالوں کیلئے کریم شیمپو‘ سر میں خشکی کیلئے اینٹی ڈینڈرف شیمپو‘ چکنے بالوں کیلئے لیمن شیمپو‘ سادے بالوں کیلئے شیمپو‘ بے شمار اقسام کے دستیاب ہیں۔اب ڈاکٹر کہتے ہیں بالوں کیلئے وٹامن اے‘ بی‘ سی‘ ڈی‘ ای‘ کلورین‘ سلفر‘ آئیوڈین اور زنک ضروری ہے۔ حیاتین کی ایک خاص مقدار بالوں کی صحت کیلئے ضروری ہے۔ تازہ سبزیاں‘ سلاد اور پھل کھانے سے بالوں کو وٹامن وغیرہ کی مطلوبہ مقدار مل جاتی ہے۔ وٹامن کی گولیاں کھانے کے بجائے اگر آپ غذا پر زور دیں تو سارے مسئلے حل ہوجاتے ہیں۔ تازہ ہوا‘ اچھی غذا اور بالوں کی مناسب دیکھ بھال سے بال گرنے بند ہوجاتے ہیں۔ سب سے آسان اور بے ضرر علاج آملہ ہے۔ رات کو مٹھی بھر آنولے ایک پیالے میں بھگودیجئے صبح آنولے مل کر چھلنی میں چھان لیجئے۔ پانی سر میں لگائیے اور چند منٹ مساج کیجئے پھر سادہ پانی سے دھولیجئے۔ ایک ماہ کے استعمال سے آپ بالوں میں نمایاں چمک اور نرماہٹ محسوس کریں گے۔

بالوں کی صحت کیلئے سب سے مفید چیز یہ ہے کہ آپ پابندی سے نماز پڑھیے۔ سجدہ کرنے سے دوران خون سر کی جانب ہوتا ہے اوراس سے بھی بال مضبوط ہوتے ہیں۔ اعصابی اور ذہنی تنائو نماز ہی سے دور ہوتا ہے۔ تنائو ختم ہوگا تو آپ کے بالوں کی صحت روز بروز بہتر ہوگی۔

بال دو چار ہفتوں میں نہیں بڑھ جاتے۔ آپ اطمینان اور سکون سے وقت گزارئیے‘ آملے سے سر دھوئیں اور تیل کا مساج کیجئے۔ آپ کو خود ہی اس بے ضرر علاج سے فائدہ محسوس ہوگا۔

About the Author

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>